اسحاق ڈار کی جانب سے نیٹو کے آفیسر سے سرمایہ کاری کیلئے رشوت مانگنے کا انکشاف

ن لیگ کی حکومت میں نیٹو کے سینئر آفیسر نے پاکستان میں بڑی سرمایہ کاری کرنے کی خواہش کا اظہار کیا، لیکن اسحاق ڈار نے سرمایہ کاروں سے رشوت مانگ لی، سینئرصحافی سعید قاضی

اسحاق ڈار کی جانب سے نیٹو کے آفیسر سے سرمایہ کاری کیلئے رشوت مانگنے ..

ن لیگ کی حکومت میں نیٹو کے سینئر آفیسر نے پاکستان میں بڑی سرمایہ کاری کرنے کی خواہش کا اظہار کیا، سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی جانب سے نیٹو کے آفیسر سے سرمایہ کاری کیلئے رشوت مانگنے کا انکشاف۔ تفصیلات کے مطابق نجی ٹیلی ویژن چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے سینئر صحافی و تجزیہ کار سعید قاضی نے تہلکہ خیز انکشاف کیا کہ ن لیگ کی حکومت میں سابق وزیر خارجہ اسحاق ڈار نے دنیا کے سب سے بڑے فوجی اتحاد نیٹو کے آفیسر سے پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے کے لیے رشوت مانگی تھی۔

سعید قاضی کی جانب سے اس انکشاف کے بعد اپنا تجزیہ پیش کرتے ہوئے سینئر صحافی عارف حمید بھٹی نے کہا کہ میں کس کے ہاتھوں میں اپنا لہو تلاش کروں۔

اس ملک کے اپنے لوگ ہی اس کی بربادی کے ذمے دار ہیں۔عارف حمید بھٹی نے کہا کہ ملک میں باہرسے سرمایہ کاری کے لیے پیسہ آ رہا ہے اور اس وقت کا وزیر خارجہ سرمایہ کاروں سے رشوت مانگ رہا ہے، یہ انتہائی افسوسناک ہے۔

قاضی سعید نے انکشاف کیا کہ جب یہ اطلاع اُس وقت کے وزیراعظم نواز شریف کو دی گئی تو اُنہوں نے اس بات کو سیریس نہیں لیا۔پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے سینئرص حافی سعید نے نیٹو کے آفیسرز کا نام بھی بتایا، انہوں نے کہا کہ stefano pontecorvo نامی آفیسر نے پاکستان میں واسپا سکوٹر کا پلاٹ لگانے کی خواہش کا اظہار کیا تھا، جس سے پاکستان کی مقامی آبادی کو روزگار میسر آنا تھا، تاہم ن لیگ نے سرمایہ کاروں سے ہی رشوت مانگ کر، اس منصوبے کو مٹی میں ملا دیا، جس کے بعد واسپا نے پاکستان میں پلانٹ لگانے یا کسی بھی قسم کی سرمایہ کاری کرنے کا فیصلہ واپس لے لیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں