جس نے آئین، پاکستان کے قانون اور حق کی بات کی اور وہ غدار کہلایا تو یاد رکھو پورا پاکستان غدار ہے

پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے لیگی رہنما جاوید لطیف کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ آئین اور حق کی بات سے ڈر لگتا ہے تو غداری اور فتوے لگائے جاتے ہیں،جس نے آئین، پاکستان کے قانون اور حق کی بات کی اور وہ غدار کہلایا تو یاد رکھو پورا پاکستان غدار ہے،اگر حق کو حق کہنا، سچ کو سچ کہنا، آئین کی سربلندی، اداروں کی سربلندی کرنا، قانون کی پاسداری کرنا غداری ہے تو ہم یہ غداری بار بار کریں گے، غدار اس کو کہتے ہیں جو امریکہ میں بیٹھ

کر کشمیر کا سودا کر ے، وہ وقت دور نہیں جب اس دھرتی کا بیٹا نوازشریف اور جاوید ہمارے درمیان ہونگے۔ اتوار کو پاکستان مسلم لیگ (ن) کے نائب صدر مریم نواز میاں جاوید لطیف کے اہل خانہ سے اظہار یکجہتی کیلئے ملاقات کی بعد ازاں کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ شیخوپورہ کے شیروں کیلئے محمد نوازشریف اور محمد شہباز شریف کا سلام لیکر آئی ہوں،میاں جاوید لطیف جیسے جمہوریت اور نوازشریف کے سپاہی کو سر جکا کر مریم نوازشریف سلام پیش کرتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ شیخوپورہ میں جاوید لطیف کی فیملی سے ملاقات کا فیصلہ گزشتہ رات کیا اور کسی کو اطلاع نہیں دی تاہم جاوید لطیف کے شہر شیخوپورہ کے عوام کے جم غفیر کو پتہ چل گیا۔ انہوں نے کہاکہ جس نے آئین کی بات کی، جس نے پاکستان کے قانون کی بات کی، جس نے حق کی بات کی اور غدار کہلایا یاد رکھو پھر پورا پاکستان
غدار ہے۔مریم نواز نے کہاکہ جاوید لطیف کو غدار کا لقب دینا جا وید لطیف کو نہیں شیخوپورہ کے عوام کو غداری کا لقب دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ یہ غداری غداری کھیلنا بہت سالوں سے سنتے آرہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ کس سے ڈر لگتا ہے؟ حق کی بات سے ڈر لگتا ہے، آئین اور قانون کی بات سے ڈر لگتا ہے، سچائی اور بہادری سے ڈر لگتا ہے تو کیا ہوتا ہے بیگ کھلتا ہے اس میں سے کبھی غداری کا لقب اور کبھی مذہب کا فتویٰ نکل آتا ہے، کبھی چور اور ڈاکو کا لقب نکل آتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ شیخوپورہ کے لوگوں کا سر فخر سے بلند ہونا چاہیے کہ نوازشریف کے شیر اور پاکستان اور شیخوپورہ کے بیٹے جاوید لطیف نے خطرہ مول لیکر حق اور سچ کی بات پر ڈٹے رہ کر نہ صرف نوازشریف، شیخوپورہ اور پاکستان کی مٹی ہونے کا حق ادا کر دیا ہے۔انہوں نے کہاکہ بات یہ ہے کہ وقت بدل گیا ہے، اگر غدار ہونا جرم ہے تو جانتے ہیں سب سے پہلے غداری کا لقب محترمہ فاطمہ جناح کو بھی دیا تھا، غداری کا لقب نوازشریف کے حصے میں بھی آیا تھا اور غداری کا لقب مریم نواز کے حصے میں بھی آیا تھا اگر حق کو حق اور سچ کو سچ کہنا،آئین کی سر بلندی کی بات کر نا، اداروں کی سر بلندی کی بات کر نا، قانون کی پاسداری کر نا غداری ہے تو ہم
یہ غداری بار بار کرینگے۔انہوں نے کہاکہ جن لوگوں نے غداری کے فتوے بانٹے کی فیکٹریز کھولی ہوئی ہیں ان کو خبر ہو کہ بائیس کروڑ عوام یہ جان چکے ہیں کہ جب تم ڈرتے ہو، جب تم ہار جاتے ہو،آئین کی سربلندی کی بات نہیں سن سکتے تو غداری کے سرٹیفکیٹ ملتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ وقت بدل رہا ہے،لوگوں نے ڈرنا چھوڑ دیا ہے، جو لوگ پہلے ڈر کر چپ کر جاتے تھے آج جاوید لطیف کی طرح آپ کو پتہ ہو حق اور سچ کہنے کی پاداش میں گرفتار کر لیا جائے تو پھر بھی حق اور سچ کا ساتھ دیں تو اس سے بڑی بہادری اور کوئی نہیں ہوسکتی۔مریم نواز نے کہاکہ سب سے اچھی بات یہ ہے کہ جو کبھی غداری کے فتوے لوگوں کے گلوں میں لٹکایا کرتے تھے،پاکستان کے بائیس کروڑ عوام نے ان کو ہیرو بنا دیا، کون کہتا تھا نوازشریف غدار ہے؟، نوازشریف کے اوپر کونسان الزام نہیں لگایالیکن اللہ تعالیٰ کا کر نا دیکھو وہی نوازشریف آج لندن میں بیٹھا ہے لیکن پاکستان کے کونے کونے سے نوازشریف کے حق میں فیصلے آرہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ووٹ کو عزت دو کس کا بیانیہ ہے؟ جس کو آپ نے چور اور ڈاکو کہا، جس کو آپ نے غدار کہا، آپ نے مذہب کے فتوے لگائے آج اس کا بیانیہ اس کا پاکستان کے کونے کونے میں پھیل چکا ہے، ڈسکہ میں لوگوں نے نوازشریف کے بیانیہ پر لبیک کہا نہ صرف ووٹ کو عزت دی بلکہ رات بھر جاگ کر ووٹ کی حرمت پر پہرہ دیا اور چھینی ہوئی سیٹ ان سے واپس لی۔اس موقع پر انہوں نے کہاکہ عوام کے نعرے ٹی وی کے ذریعے عوام سنیں تاکہ عوام کو پتہ چلنا چاہیے اس دھرتی کے اصل غدار کون ہیں؟۔

اپنا تبصرہ بھیجیں