خاتون کا سابق شوہر پر مذہب چھپانے کا الزام، ایف آئی اے کی تفتیش میں انکشافات

لاہور میں ایک خاتون نے فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی کو اپنے سابق شوہر کیخلاف ایف آئی آر درج کروائی ہے جس میں الزام لگایا کہ دس سالہ شادی میں شوہر نے اپنا مذہب چھپایا، خاتون نے مزید الزام لگایا کہ اس نے اپنی پہلی شادی بھی چھپائی ،اسلام قبول کرنے کا جھوٹ کہا اور اس کے قتل کی سازش بھی کی۔

ایف آئی اے نے دوران تفتیش اس کے سابق شوہر کے کچھ آڈیو کال ریکارڈز برآمد کیے،جس میں اس شوہر نے سابق بیوی کے والد اور اس کے بھائی کو قتل کرنے کا حکم دیا،مشتبہ شخص کو یہ کہتے ہوئے سنا کہ قتل کی آدھی رقم دے دی آدھی بیوی کے قتل کے بعد ادا کی جائے گی،پولیس نے ملزم کو گرفتار کرلیا، ملزم نے ضمانت کے لئے درخواست دائر کی ، جسے سیشن کورٹ نے خارج کردیا، سابق شوہر جیل کاٹ رہا ہے۔

رپورٹ کے مطابق خاتون کے والد کے اپنے سابق داماد کے اہل خانہ سے کاروباری تعلقات تھے۔ ملزم کے اہلخانہ نے 2011 میں شادی کیلئے کہا تھا،دونوں کی دو بیٹیاں ہیں،دوسری بیٹی پیدا ہونے کے بعد خاتون نے پہلی بار اپنے شوہر سے اس کی نکاح ناما کے لئے اسکول میں اپنی بڑی بیٹی کے داخلے کے لئے پوچھا،مبینہ طور پر اس کا شوہر اسے دینے سے گریزاں ہے۔

خاتون نے یہ بھی الزام لگایا کہ ایک دن اس کے اس وقت کے شوہر ایک خاتون اور دو بچوں کے ساتھ گھر آئے اور انہیں اطلاع ملی کہ شوہرنے اس سے قبل اس عورت کے ساتھ شادی کرلی ہے،بعد میں سسرال سے پتا چلا کہ وہ مسلمان بھی نہیں۔

کچھ دن بعد ملزم اپنی پہلی بیوی کے ساتھ اس کے والدین کے گھر گیا اور اسے بتایا کہ ان سب نے اسلام قبول کرلیا،اس کے قائل کرنے کے بعد وہ اپنے شوہر کے ساتھ جانے پر راضی ہوگئی۔

خاتون نے الزام لگایا کہ اس کے شوہر نے اس کو مارا پیٹا بھی، جس پر خاتون نے پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کروائی، بعد میں ملزم نے خاتون کی قابل اعتراض تصاویر اور ویڈیوز آن لائن لیک کردیں، اس کے بعد وہ ایف آئی اے سائبر کرائم سیل گئی اور ایف آئی آر درج کروائی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں