خالی بوتل شرٹ میں ڈال کر اسلام آبادہائی وے گھومنے والا نوجوان موٹرسائیکل سوار کون تھا

اسلام آباد ایکسپریس وے پر ہیلمٹ پہنے بڑی ہی سرعت کے ساتھ موٹر سائیکل بھگائے چلا جا رہا تھا۔شام کے چھ بجنے میں صرف دس منٹ باقی تھے۔ اور مجھے چھ بجے آفس پہنچنا تھا۔اچانک موٹر سائیکل ایسے جھٹکے کھانے لگا جیسے پٹرول ختم ہوگیا ہو۔ میں نے پٹرول کی نشاندہی کرنے والے سوئچ کو آن سے گھما

کر ریزور کی جانب گھمانے کےلئے اپنا ہاتھ گھمایا تو مجھے اندازہ ہوا کہ وہ پہلے سے ہی ریزرو پر لگا ہوا تھاجس کا مطلب یہ تھا کہ ٹینکی بالکل خالی ہوچکی تھی۔ میرے اوسان خطا ہوگئے کیونکہ گزشتہ روز چھٹی کرنے کے بعد آج میراآفس دیر سے پہنچنا یقینی ہوچکا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں