ریسٹورنٹس کو کرسی لگانے کی اجازت نہیں ہوگی، ٹیک اوے کے لیے کوئی اپنی گاڑی سے بھی نہیں اترے گا۔ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی زیر صدارت کورونا ٹاسک فورس اجلاس میں فیصلہ

عیدالفطر پر ریسٹورنٹس کو ٹیک اوے کی اجازت دے دی گئی

صوبہ سندھ میں عیدالفطر کے موقع پر ریسٹورنٹس کو ٹیک اوے کی اجازت دے دی گئی، ریسٹورنٹس کو کرسی لگانے کی اجازت نہیں ہوگی، ٹیک اوے کے لیے کوئی اپنی گاڑی سے نہیں اترے گا۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی صدارت میں کورونا ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا، جس میں وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ گزشتہ سال عید پر ملنا جلنا بڑھنے سے 30 فیصد کیسز بڑھ گئے تھے، اس سال عوام سے پرزور اپیل ہے کہ رشتے داروں کو گھر آنے سے روکیں،

ریسٹورنٹ کو ٹیک اوے کی اجازت دے دی ہے لیکن ریسٹورنٹس کو کرسی لگانے کی اجازت نہیں ہوگی، اس کے علاوہ ٹیک اوے کے لیے کوئی اپنی گاڑی سے نہیں اترے گا کیوں کہ اگر لوگ احتیاط نہیں کریں گے تو صورتحال پھر عید کے بعد خراب ہوجائے گی۔

اجلاس میں بریفنگ کے دوران بتایا گیا کہ اس رمضان کے پہلے ہفتے میں 4 اعشاریہ 71 فیصد کیسز اور 23 اموات ہوئیں ، دوسرے ہفتے میں 6 اعشاریہ 31 فیصد کیسزاور43 اموات ، جب کہ تیسرے ہفتے میں 6 اعشاریہ 96 فیصد کیسز اور 62 اموات اور چوتھے ہفتے میں 7 اعشاریہ 08 فیصد کیسز اور 64 اموات رپورٹ ہوئیں، ایکسپو ویکسی نیشن سینٹر عید کے دوران کھلا رکھا جائے گا اور عید کے بعد دیگرشہروں میں ویکسی نیشن سینٹرز قائم کئے جائیں گے۔

دوسری طرف شہریوں کو روکنے کے لئے بازاروں کی جانب آنے والی والے راستوں پر بیر یئرز لگانے کا فیصلہ کرلیا گیا، صوبائی دارالحکومت لاہور میں کورونا ایس او پیز پر مزید سختی سے عمل درآمد کروانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے تحت شہریوں کو باز کی جانب سے آنے سے روکنے کے لیے راستوں پر بیریئرز لگادیے گئے ہیں ، اسلام پورہ ، گلشن راوی، بادامی باغ اور انار کلی بازار سمیت تمام بازاروں میں بیریئرز لگائے جائیں گے ، اس مقصد کے لیے پولیس کی جانب سے بیریئرز پہنچنانے کا کام شروع کردیا گیا ہے

کیوں کہ عیدالفطر پر کورونا وائرس کے پھیلاو پر قابو پانے کیلئے حکومت نے اہم اقدامات اٹھاتے ہوئے لاک ڈاون میں مزید سختی کا اعلان کیا گیا ہے ، اس حوالے سے وزیر صحت یاسمین راشد کی زیر صدارت کورونا وائرس کی صورتحال سے متعلق جائزہ اجلاس ہوا جس میں وزیر قانون راجہ بشارت، چیف سیکریٹری پنجاب سمیت دیگر نے شرکت کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں