سعودی حکومت عمرہ کے خواہش مندوں کے لیے اہم بیان جاری کر دیا

سعودی حکومت عمرہ کے خواہش مندوں کے لیے اہم بیان جاری کر دیا

سعودی حکومت کی جانب سے رمضان المبارک کے دوران عمرہ کے خواہش مندوں پر یہ پابندی عائد کی گئی تھی کہ انہی لوگوں کو ویکسین لگوانے کی اجازت دی جائے گی جو عمرہ ویکسین لگوا چکے ہوں گے۔ سبق ویب سائٹ کے مطابق بہت سے لوگوں نے سوال کیا ہے کہ کیا شوال میں عمرہ کرنے والوں پر بھی ویکسین کی شرط لاگو ہو گی یا یہ پابندی صرف رمضان المبارک کے دوران تھی۔

اس حوالے سے وزارت حج و عمرہ کے رابطہ مرکز نے جواب دیا ہے کہ عمرہ کرنے کے لیے ویکسین لگوانے کی پابندی اب رمضان کے بعد بھی عائد رہے گی۔ آئندہ عمرہ کے اجازت نامے صرف انہی کو جاری ہوں گے جنہوں نے کورونا ویکسین کی دونوں خوراکیں لگوا لی ہوں گی یا انہیں ایک خوراک لیے 14 دن گزر چکے ہوں گے۔

یہ فیصلہ عمرہ زائرین کی زندگی اور صحت کے تحفظ کو یقینی بنانے کی خاطر لیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ رمضان کے مہینے میں بیت اللہ کی رونقیں لوٹ آئی ہیں۔ سعودی نائب وزیر حج و عمرہ ڈاکٹر عبدالفتاح بن سلیمان مشاط نے بتایا ہے کہ اس بار رمضان کے پہلے دو عشروں میں دس لاکھ سے زیادہ افراد نے عمرہ ادا کیا۔انہوں نے بتایا کہ رمضان کے آخری عشرے میں مسجد الحرام میں بہت زیادہ رش ہو گا کیونکہ زیادہ سے زیادہ لوگ عمرہ اور نمازوں کی سعادت حاصل کرنا چاہتے ہیں۔

تاہم کورونا کی وبا کا خطرہ بھی درپیش ہے، اس لیے رش سے نمٹنے کے لیے ایک بہترین منصوبہ وضع کیا گیا ہے۔رمضان مبارک کے پہلے بیس روز کے دوران میں مسجد حرام کے دروازوں پر تھرمل کیمروں کے ذریعے تیس لاکھ سے زیادہ افراد کی جانچ کی گئی۔ ان افراد میں معتمرین، نمازی اور کارکنان شامل ہیں۔ اس مقدس مہینے میں اب تک 30 لاکھ سے زائد افراد نماز اور عمرہ کے لیے آ چکے ہیں۔

اللہ کے فضل سے کسی بھی شخص میں کورونا کی تصدیق نہیں ہوئی ہے۔ اگرچہ سعودی حکومت کی جانب سے گزشتہ چند سالوں کے دوران غیر ملکی عمرہ زائرین کی گنتی 70 لاکھ تک بڑھا دی گئی ہے۔ تاہم دُنیابھر میں مسلمانوں کی آبادی ایک ارب سے زیادہ ہے۔ ایک مخصوص تعداد مقرر ہونے کی وجہ سے کروڑوں افراد ایسے ہیں جنہوں نے ابھی تک عمرہ کی سعادت حاصل نہیں کی۔

اس حوالے سے سعودی حکومت نے خوش خبری دے دی ہے۔ جس کے تحت آئندہ چند سالوں میں عمرہ زائرین کی تعداد بڑھا کر 3 کروڑ تک کی جائے گی۔ ہر سال عمرہ زائرین کی گنتی بتدریج بڑھائی جائے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں