شہبازشریف کو بیرون ملک جانے سے روک کر بادی النظر میں حکومت نے توہین عدالت کی ، سپریم کورٹ ‎‎

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ نے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کو بیرون ملک جانے سے روکنے کے لیے وفاقی حکومت کی اپیل کو ابتدائی سماعت کے لیے منظور کرلیا۔جیو نیوز کے مطابق سپریم کورٹ کے جسٹس اعجاز الاحسن اور جسٹس سجاد علی شاہ پر مشتمل

2 رکنی بینچ نے شہبازشریف کو بیرون ملک جانے سے روکنے کیلئے وفاقی حکومت کی اپیل پر سماعت کی جسے عدالت نے ابتدائی سماعت کے لیے منظور کرتے ہوئے فریقین کو نوٹس جاری کردیا۔دورانِ سماعت اٹارنی جنرل نے کہا کہ مسئلہ کسی کے بیرون ملک جانے کا نہیں عدالتی طریقہ کار کا ہے، جس رفتار سے عدالت لگی اور حکم پرعملدرآمد کا کہا گیا وہ قابل تشویش ہے، ہائیکورٹ میں جمعتہالوداع کے روز اعتراضات لگے اور دوربھی ہوئے اور لاہور ہائیکورٹ کے سنگل بینچ نے یکطرفہ فیصلہ دیا۔اس پر عدالت نے کہا کہ لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کیخلاف حکومتی اداروں نے اقدام کیا، بادی النظر میں حکومت نے لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کی توہین کی۔جسٹس سجاد علی شاہ نے کہا کہ شہبازشریف نے ہائیکورٹ سے درخواست واپس لے لی ہے، درخواست واپس ہونے کے بعد وفاق کی اپیل کیسے سنی جاسکتی ہے؟ شہبازشریف کا بیرون ملک جانے کا معاملہ تو ختم ہوگیا، اب دیکھنا یہ ہے کہ لاہورہائیکورٹ کے حکم کی توہین ہوئی یا نہیں، حیرت ہے ہائیکورٹ نے فریقین کو سنے بغیر فیصلہ کیسے دے دیا۔بعد ازاں عدالت نے شہبازشریف کو نوٹس جاری کردیا اور رجسٹرار لاہور ہائیکورٹ سے تمام ریکارڈ طلب کرتے ہوئے سماعت آئندہ بدھ تک ملتوی کردی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں