شہباز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت، پیپلز پارٹی کا ردِعمل آ گیا

شہباز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت، پیپلز پارٹی کا ردِعمل آ گیا

لاہور ہائیکورٹ نے پاکستان مسلم لیگ ن کے صدر میاں محمد شہباز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت دے دی ہے۔اسی پر ردعمل دیتے ہوئے پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما چوہدری منظور نے کہا کہ میں اس بحث میں نہیں پڑنا چاہتا لیکن اس ملک میں جو کچھ بھی ہوتا ہے عدالتوں کے ذریعے ہوتا ہے۔جب صحافیوں سے وزیراعظم عمران خان کی ملاقات ہوئی تو ان سے شہباز شریف کی ضمانت سے متعلق سوال کیاگیا جس پر عمران خان نے کہا کہ یہ سوال آپ کو آرمی چیف سے کرنا چاہیے۔

تو اسی میں ساری کہانی باہر آجاتی ہے۔تو اس ملک میں یہی المیہ ہے کہ لوگوں کو پکڑ پکڑ کر جیلوں میں ڈالا جارہا ہے کسی کو منشیات کے کیس میں جیل میں ڈال دیا جاتا ہے، کسی کو پوچھیں ہی نہ۔نیب سے پوچھا جائے کہ سیاستدانوں، بیورو کریسی اور کاروباری افرسد اسی سے کتنا پیسہ ریکور کیا ہے۔

واضح رہے کہ اہور ہائیکورٹ نے ایک بار پھر شہباز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت دے دی ہے۔

شہباز شریف کو باہر جانے کی مشروط اجازت 8 مئی سے 5 جولائی تک ہو گی، بلیک لسٹ سے نام نکلنے کے بعد شہباز شریف کل ہی لندن روانہ ہو جائیں گے۔ شہباز شریف نے پیر کو لندن میں ڈاکٹرز سے اپوائنٹمنٹ لے رکھی ہے۔ پاکستان مسلم لیگ ن کے صدر میاں محمد شہباز شریف کل صبح غیرملکی ایئرلائن کی پرواز سے لاہور سے دوحہ روانہ ہوں گے، شہبازشریف برطانیہ جانے کیلئے دوحہ میں ضروری قرنطینہ کریں گے، جبکہ 22 مئی کو لندن میں اپنے معالج سے طبی معائنہ کرائیں گے۔

خاندانی ذرائع کا کہنا ہے کہ صدر ن لیگ اور اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی بیرون ملک روانگی کیلئے ہنگامی بنیادوں پر تیاریاں جاری ہیں۔ شہباز شریف کل صبح ساڑھے 4 بجے غیرملکی ایئرلائن کی پرواز سے لاہور سے دوحہ روانہ ہوں گے۔شہباز شریف برطانیہ جانے کیلئے دوحہ میں ضروری قرنطینہ کریں گے۔ شہباز شریف لندن میں 22 مئی کو اپنے معالج سے طبی معائنہ کرائیں گے

اپنا تبصرہ بھیجیں