لاہور کے علاقے غازی آباد میں دو سالہ بچے کی قاتل چچی نکلی

سارے رشتے دار شایان کو پیار کرتے تھے میرے بچے کو کوئی پیار نہیں کرتا تھا، حسد میں آکر قتل کیا۔ ملزمہ کا دل دہلا دینے والا بیان

لاہور کے علاقے غازی آباد میں دو سالہ بچے کی قاتل چچی نکلی

لاہور کے علاقے غازی آباد میں دو سالہ بچے کی قاتل چچی نکلی۔تفصیلات کے مطابق لاہور میں دو سالہ بچے کو بے دردی سے قتل کر دیا گیا تھا۔تاہم اب پولیس بچے کے قاتل کو ڈھونڈنے میں کامیاب ہو چکی ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق اس کیس کا مختلف پہلوؤں سے جائزہ لیا گیا۔جس کے بعد یہ بات سامنے آئی کہ دو سالہ بچے کو اپنی ہی چچی نے موت کے گھاٹ اتارا۔

ملزمہ سندس سے تفتیش کے دوران ان جرم قبول کرلیا ہے۔پولیس کے مطابق ملزمہ نے حسد کی وجہ سے بچے کو قتل کیا،پہلے بچے کو گلا دبا کر مارا اور نیچے پھینک دیا۔ملزمہ کے اعتراف کے بعد قتل میں معاونت کے شعبے پر مزید تفتیش جاری ہے۔پولیس نے ملزمہ کو گرفتار کر لیا ہے۔ملزمہ نے پولیس کو بتایا کہ سارے رشتے دار شایان کو محبت کرتے تھے میرے بچے سے کوئی محبت نہیں کرتا تھا، اسی وجہ سے شایان کو قتل کیا۔

اسی بنا پر بچے کو قتل کیا اور لاش چھت سے نیچے پھینک کریں۔خیال رہے کہ 12 اپریل کو لاہور میں خالی پلاٹ سے دو سالہ بچے کی لاش برآمد ہوئی تھی۔بتایا گیا کہ لاہور کے علاقے صلی ٹاؤن میں خالی پلاٹ سے دو سالہ بچے کی لاش ملی ہے۔ پولیس کے مطابق شایان علی کو گلا کاٹ کر قتل کیا گیا۔ذرائع کے مطابق بچہ دوپہر 2 بجے سے گھر سے لاپتہ تھا۔چھت سے خون بھی ملا ہے۔

پولیس اور ان کی ٹیموں نے جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کرکے لاش کو مردہ خانے منتقل کر دیا ۔ پولیس ذرائع کا کہنا تھا کہ کچھ شواہد ملے ہیں جلد ملزمان تک پہنچیں گے۔بچے کے قتل کی تفتیش جاری ہے اور معاملے کے مختلف پہلوؤں سے جائزہ لیا جا رہا ہے۔پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ مقتول کے باپ کی دو شادیاں تھیں اور دونوں بیویاں اکٹھی رہتی تھیں۔اور اب پولیس بچے کو قتل کرنے والی ملزمہ کو گرفتار کرنے میں کامیاب ہو گئی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں