ماہرہ کے دائیں ہاتھ اور بائیں پاؤں پر زخم کے نشانات، لڑکی کی موت گردن پر لگنے والی گولی سے ہوئی، پوسٹ مارٹم رپورٹ

برطانیہ سے آئی لڑکی کا پراسرار قتل، پوسٹ مارٹم رپورٹ میں نئے انکشافات

لاہور میں برطانیہ سے آئی لڑکی کا پراسرار قتل، ماہرہ کے دائیں ہاتھ اور بائیں پاؤں پر زخم کے نشانات، لڑکی کی موت گردن پر لگنے والی گولی سے ہوئی، پوسٹ مارٹم رپورٹ میں نئے انکشافات سامنے آ گئے۔ تفصیلات کے مطابق لاہور کے علاقے ڈیفنس فیز فائیو میں گزشتہ روز برطانیہ سے آنے والی لڑکی کو قتل کردیا گیا تھا، مقتولہ کی ابتدائی پوسٹ مارٹم رپورٹ سامنے آگئی۔

ابتدائی پوسٹ مارٹم رپورٹ کے مطابق مقتولہ ماہرہ کے جسم پر دو گولیوں کے نشان ملے ہیں، ایک گولی مقتولہ کی گردن جبکہ دوسری بازو پر لگی، ماہرہ کے دائیں ہاتھ اور بائیں پاؤں پر زخم کے نشانات پائے گئے ہیں۔رپورٹ کے مطابق ماہرہ ذوالفقار کی موت گردن میں لگنے والی گولی سے ہوئی۔ مقتولہ کے انکل کا کہنا ہے کہ ماہرہ ذوالفقار برطانیہ کی شہری تھیں، ان کے اہلخانہ کل لاہور پہنچیں گے۔

دوسری جانب پولیس کا کہنا ہے کہ ماہرہ کی روم میٹ اقرا کو حراست میں لیا گیا ہے، مقدمے میں نامزد ظاہر جدون اور سعد امیر کی دوست تھیں، مقدمے میں نامزد دونوں افراد کو گرفتار نہیں کیا جاسکا ہے۔بتایا گیا کہ ہے ماہرہ نامی لڑکی دو ماہ سے کرائے کے مکان کے اوپر والے پورشن میں دوست کے ساتھ رہائش پذیر تھی۔جو اس کے ملحقہ کمرے میں رہائش پذیر تھا۔

مقتولہ خاتون کے چچا کی شکایت پر قتل کے الزام میں مائرہ کے دو مطلوب دوستوں کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے۔محمد نذیر نے دائر درخواست میں بتایا کہ ماہرہ نے چند روز قبل بتایا تھا کہ اس کے دوست اسے ”سنگین نتائج” کی دھمکیاں دے رہے ہیں۔ماہرہ نے یہ بھی کہا کہ میری جان کو دونوں سے خطرہ ہے۔جس ہر اسے کسی بھی مشکل صورتحال سے متعلق آگاہ کرنے کا کہا۔لڑکی کے چچا کے مطابق تینوں میں تنازعہ کی وجہ یہ تھی کہ سعد مائرہ کو شادی کرنے پر مجبور کرتا تھا جب کہ دوسرا دوست بھی شادی کرنا چاہتا تھا۔ ایف آئی آر کے مطابق مائرہ نے ان دونوں میں سے کسی سے بھی شادی کرنے سے انکار کر دیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں