مسابقتی کمیشن نے مرغی کی قیمت میں اضافے کا پتا لگا لیا

مسابقتی کمیشن نے مرغی کی قیمت میں اضافے کا پتا لگا لیا

مسابقتی کمیشن نے مرغی کی قیمت میں اضافے کا پتا لگا لیا ہے، 19پولٹری فیڈ کمپنیوں کو مرغی کی قیمت میں اضافے کا ذمہ دار ٹھہرایا گیا ہے، کمپنیوں نے پولٹری فیڈ کی قیمت 825 روپے فی 50 کلوگرام اضافہ کیا۔ تفصیلات کے مطابق مسابقتی کمیشن نے زندہ مرغی اور مرغی کے گوشت کی قیمت میں اضافے کی تحقیقات کی ہیں، جس میں معلوم کہ فیڈ کمپنیوں نے مرغیوں کی فیڈ کی قیمت میں اضافہ کردیا ہے۔

اس طرح 19پولٹری فیڈ کمپنیوں کو مرغی کی قیمت میں اضافے کا ذمہ دار ٹھہرایا گیا ہے۔ پہلے مرغی کا گوشت 200 روپے فی کلو اور زندھ مرغی کی قیمت 120 فی کلو تھی۔ انڈے کی فی درجن قیمت 320 روپے تک پہنچ گئی ہے۔ فیڈ کمپنیوں کے کارٹل نے دسمبر2018 سے دسمبر2020 کے دوران فیڈ میں11مرتبہ اضافہ کیا۔

جس کے باعث پولٹری فیڈ کی قیمت میں825 روپے 50 کلوگرام فی بیگ اضافہ ہوا۔

جس سے مرغی، گوشت اور انڈوں کی قیمت میں اضافہ ہوا۔ دوسری جانب ادارہ شماریات کی رپورٹ کے مطابق زندہ مرغی 27 روپے 11 پیسے فی کلو مہنگی کے بعد فی کلو زندہ مرغی 288 روپے 72 پیسے کی ہوگئی ہے۔ مٹن 7 روپے 8 پیسے فی کلو مہنگا ہوا۔ بیف 5 روپے 79 پیسے فی کلو مہنگا ہوگیا ہے۔ رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ حالیہ ہفتے میں مہنگائی کی شرح میں 0.50 فیصد اضافہ ہوا۔

مہنگائی کی شرح 17.05 فیصد ہوگئی ہے۔ مرغی، چینی اور آٹے سمیت 18 اشیائے ضروریہ مہنگی ہوئیں۔ اسی طرح حالیہ ہفتے7 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کمی ہوئی۔ جس میں انڈے اوسطاً 9 روپے 52 پیسے فی درجن سستے، پیاز ایک روپے 38 پیسے، آلو 62 پیسے فی کلو سستے ایل پی جی کا گھریلو سلنڈر 70 روپے 95 پیسے سستا ہوا۔ ادارہ شماریات کی رپورٹ کے مطابق حالیہ ہفتے 26 اشیاء کی قیمتوں میں استحکام رہا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں