ملک میں فوری کرفیو کی نوعیت کا لاک ڈاؤن نافذ کیا جائے

بھارت جیسے حالات ہونے کا انتظار مت کریں،وقت ہے کہ حکومت صحیح اقدامات کرے۔صدر پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن لاہور کا بیان

ملک میں فوری کرفیو کی نوعیت کا لاک ڈاؤن نافذ کیا جائے

پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن لاہور کے صدر ڈاکٹر اشرف نظامی نے کورونا وائرس کے بڑھتے کیسز کے باعث حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ فوری کرفیو کی نوعیت کا لاک ڈاؤن نافذ کیا جائے۔لاہور سروسز اسپتال میں ڈاکٹروں کی مختلف تنظیموں کے عہدیداروں نے پریس کانفرنس کی۔صدر پی ایم ایل لاہور ڈاکٹر اشرف نظامی کا کہنا تھا کہ بھارت کی صورتحال ہمارے سامنے ہے۔

وقت ہے کہ حکومت صحیح اقدامات کرے۔حکومت فوری کرفیو کی نوعیت کا لاک ڈاؤن نافذ کرے۔پرائیویٹ میڈیکل کالجز کے ساتھ منسلک اسپتالوں کو نیشنلائز کیا جائے۔اگر نیشنلائز نہیں کر سکتے تو ان کے ساتھ مل کر کوئی پالیسی بنائیں جس سے کورونا کے مریضوں کو ریلیف مل سکے۔انہوں نے مزید کہا کہ پرائیویٹ ہسپتالوں کے اندر 50000 سے دو لاکھ تک ایک دن کا خرچہ آتا ہے۔3

ہیلتھ کیئر کمیشن پرائز کنٹرول پر اپنا کردار ادا کرے۔خیال رہے کہ ملک بھر میں گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دور ان 151افراد چل بسے ،5480نئے کیسز رپورٹ ہوئے ،کورونا مریضوں کی تعداد کے حوالے سے مرتب کی گئی فہرست میں ملک 31 ویں نمبر پر ہے۔نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول سینٹر (این سی او سی) کے اعداد و شمار کے مطابق پاکستان میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے مزید 5 ہزار 480 کیسز سامنے آئے ہیں، مزید 151 افراد اس موذی وباء کے سامنے زندگی کی بازی ہار گئے، 3 ہزار 699 مریض شفایاب ہو گئے، مثبت کیسز آنے کی شرح ساڑھے 9 فیصد ہو گئی۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں