میں پاکستان کا وزیراعظم ہوں اور ہم غزہ کے ساتھ کھڑے ہیں

میں پاکستان کا وزیراعظم ہوں  اور ہم غزہ کے ساتھ کھڑے ہیں

وزیراعظم عمران خان کا 2014ء میں غزہ کی حمایت میں کیا گیا ٹویٹ ابھی بھی سوشل میڈیا پر زیر گردش ہے۔وزیراعظم عمران خان نے 25 جولائی 2014 کو کیے گئے ٹویٹ میں غزہ پر اسرائیل کی وحشیانہ بمباری کی مذمت کرتے ہوئے اپنی حمایت کا کھلا اظہار کیا تھا۔انہوں نے اپنی ٹویٹ میں کہا کہ ’ میرا نام عمران خان ہے، میرا تعلق پاکستان سے ہے اور میں غزہ کی حمایت کرتا ہوں‘۔

سوشل میڈیا پر ہیش ٹیگ سپورٹ غزہ کی اس مہم میں آج پھر سات سال بعد صارفین عمران خان کے اسی ٹویٹ پر ردعمل دیتے ہوئے اپنی حمایت کا اعلان کر رہے ہیں۔صارفین نے عمران خان سے مطالبہ کیا کہ اب آپ وزیراعظم پاکستان بن چکے ہیں لہذا فلسطین پر کیے جانے والے حملوں پر کچھ واضح اقدامات کریں۔

انہوں نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ ” میں پاکستان کا وزیراعظم ہوں اور ہم غزہ کے ساتھ کھڑے ہیں‘۔ انہوں نے ” ہم فلسطین کے ساتھ کھڑے ہیں” کا بھی پیش ٹیگ استمعال کیا۔وزیراعظم عمران خان نے نامور دانشور نام چومسکی کی پوسٹیں شیئر کی۔

ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ چوہدری نے کہاکہ اسرائیل کے فضائی حملوں کے نتیجے میں بچوں سمیت متعدد بے گناہ فلسطینی جاں بحق اور زخمی ہوئے۔ ترجمان دفتر خارجہ نے کہاکہ رمضان کے مقدس مہینے میں مسجد اقصی پر حملے قابل مذمت اقدام ہے۔انہوںنے کہاکہ اسرائیلی افواج کی جانب سے فلسطینیوں پر طاقت کے استعمال سے کئی اموات اور افراد زخمی ہوئے ہیں ۔ ترجمان نے کہاکہ اسرائیلی افواج کے اقدام تمام انسانی بنیادوں اور انسانی حقوق کے قوانین کی نفی کرتے ہیں۔ ترجمان دفتر خارجہ نے کہاکہ پاکستان عالمی برادری سے مطالبہ کرتا ہے کہ وہ فلسطین میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کو ختم کرائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں