نجی ائیرلائن میں نازیبا حرکات کرنے والے جوڑے کی ایک روز قبل شادی ہوئی تھی

دوران سفرنجی ائیر لائن، ایئر بلیو میں جوڑے کے خلاف شکایت کرنے والے نوجوان مسافر فاروق علوی کا کہنا ہے کہ جہاز میں جوڑے کے خلاف شکایت سب سے پہلے ایک خاتون نے کی۔شکایت کرنے پر خاتون کی سیٹ بدل دی گئی۔مجھے اس معاملے

سے متعلق علم نہیں تھا۔اس کے بعد میرے چھوٹے بیٹے کی نظر جوڑے پر پڑی۔بیٹے نے مجھ سے سوال کیا کہ بابا انکل آنٹی کیا کر رہے ہیں؟بچے کے کہنے کے بعد جب میں نے مڑ کر دیکھا تو جوڑا غیر اخلاقی حرکات میں مشغول تھا۔میں نے ایئرہوسٹس کو کہا کہ یا تو ہماری سیٹ بدل دیں یا پھر اس جوڑے کی سیٹ بدل دیں ۔جب ائیرہوسٹس نے جوڑے کو منع کیا تو انہوں نے کہا کہ ہمارا کل ہی نکاح ہوا ہے اور ہم ایک روز پہلے شادی کے بندھن میں بندھے ہیں۔تاہم میں نے پھر بھی ایئرہوسٹس کو کہا کہ ان کا نکاح ایک روز قبل ہوا ہے یا پھر دو سال قبل لیکن ان کی حرکات بہت غیر اخلاقی ہیں لہذا ہماری سیٹ تبدیل کی جائے۔انہوں نے مزید کہا کہ میں جوڑے کی ویڈیو بھی بنا سکتا تھا اور تصویر بھی بنا سکتا تھا لیکن میں نے ایسا نہیں کیا کیونکہ میں نہیں چاہتا تھا کہ کسی ایک غلطی کی وجہ سے ان کی پوری زندگی تباہ ہو جائے۔میں نے ویڈیو بنانے کی بجائے قانونی راستہ اختیار کیا۔انہوں نے کہا کہ عوامی مقام پر غیر اخلاقی حرکات کرنا جرم ہے اور نہ ہی ہمارا معاشرہ اس کی اجازت دیتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں