وزارت ہاؤسنگ نے ملک میں 50 لاکھ گھروں کی تعمیر سے لاتعلقی کا اظہار کر دیا

وزارت ہائوسنگ نے ملک میں تیار ہونے والے 50لاکھ گھروں سے لاتعلقی کا اظہار ۔ تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی میں خطاب کے دوران وزیر ہائوسنگ طارق بشیر چیمہ نے کہا ہے کہ 50لاکھ گھروں کی تعمیر نیا پاکستان ہائوسنگ اتھارٹی کر رہی ہے جس کی براہ راست مانیٹرنگ وزیراعظم

عمران خان خود کر رہے ہیں ۔ نجی ٹی وی جیو کے مطابق طارق بشیر چیمہ کا کہنا تھا کہ اس حوالے سے تمام سوالات کے جوابات بھی ان سے ہی لیے جائیں، وزارت ہاؤسنگ کا اس معاملےسے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔دوسری جانب وزیرِ اعظم عمران خان نے وزیر خزانہ کو معاشرے کے کمزور طبقات کو روزگار اور گھروں کی تعمیر کیلئے قرضوں کی فراہمی، صحت کارڈ کے اجرا ء اور غریب خاندانوں کے ایک افراد کو فنی و پیشہ وارانہ تربیت دلانے کیلئے جامع منصوبہ پیش کرنے کی ذمہ داری تفویض کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک کے بڑے شہروں کے ماسٹر پلان جلد سے جلد مرتب کئے جائیں، سرسبز پاکستان آئندہ نسلوں کے تحفظ اور بہتر ماحول کیلئے ضروری ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کو نیشنل کوآرڈینیشن کمیٹی برائے ہاؤسنگ، کنسٹرکشن اینڈ ڈویلپمنٹ کے ہفتہ وار اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں گرین ایریاز کے تحفظ کے لئے زرعی، رہائشی و دیگر زمینوں کے استعمال کے حوالے سے مروجہ قوانین و قواعد میں تبدیلی کرنے کا فیصلہ کیا گیا تاکہ زرعی اراضی و گرین ایریاز کا تحفظ کیا جا سکے اور کسی ایسی زمین کی نوعیت بدلنے کا اختیار اعلیٰ سطح پر منتقل کیا جا سکے۔ وزیرِ اعظم عمران خان نے معاشرے کے کمزور طبقوں کو روزگار کے لئے آسان اور کم شرح پر

قرضوں کی فراہمی، کم آمدنی والے افراد کو ذاتی گھروں کی تعمیر کے لئے قرضوں کی فراہمی، صحت کارڈ کی فراہمی اور غریب خاندانوں کے کم از کم ایک فرد کو ٹیکنیکل و پرفیشنل ہنر دلوانے کے حوالے سے جامع پلان بنانے اور پیش کرنے کی ذمہ داری وزیرِ خزانہ کو سونپ دی۔ اجلاس کو وزارتِ ماحولیات کی جانب سے مرتب

کردہ گرین بلڈنگ کوڈکے حوالے سے بریفنگ دی گئی۔ اجلاس میں پائلٹ پراجیکٹ کے طور پرگرین بلڈنگ کوڈ ز کا نفاذ نیا پاکستان ہاؤسنگ منصوبوں سے کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں