پیروں کی گرمی ختم کرنے کے ٹوٹکے

پیروں کے جلنے یا پیروں میں آگ محسوس ہونے کی دو وجوہات ہیں ؛ایک اعصاب کی خرابی جو ہمیں پتہ نہیں چلتی اور دوسرے ذیابطس یعنی شوگر۔اگر آپ کو لگتا ہے کہ آپ کے پیر جل رہے ہیں یا پیروں میں سے آگ نکل رہی ہے۔تو اس کی وجہ جاننے کے لئے آپ کو ڈاکٹر سے رجوع کرنا پڑے گا ۔

اگر اعصاب بہت ذیادہ متاثر ہیں تو اس کا علاج دواؤں سے کرنا ضروری ہے۔ اور اگر آپ کوپیر جلنے کی وجہ پہلے سے معلوم ہے اور آپ اس کا علاج قدرتی طریقوں سے کرنا چاہتے ہیں تو چند ٹوٹکے آپ کے لئے لکھے جا رہے ہیں ۔

غذا میں تبدیلی لائیں

اگر آپ کو شوگر ہے تو آپ کی اس تکلیف کا باعث آپ کی غذا ہے۔اس لئے ایسی غذا کھائیں جس سے آپ کا شوگر لیول نارمل رہے۔اپنی انسولین لینا نہ بھولیں ۔ تین وقت ذیادہ کھانے کے بجائے دن بھر میں تھوڑا تھوڑا کھانا پانچ چھ مرتبہ کھائیں ۔اچھی غذاکے ذریعے شوگر کو کنٹرول کرنا ۔پیروں کی جلن کے لئے بہت مفید ہے۔

سگریٹ نوشی ترک کریں

اعصاب کی کمزوری کی اہم وجہ سگریٹ نوشی ہے،سگریٹ نوشی ترک کرنے سے نروز ذیادہ جلدی بہتر ہونگے۔اور اس طرح آپ کو پیروں کی جلن سے نجات ملے گی۔اگر آپ تمباکو کھاتے ہیں تو اس کو بھی ترک کریں۔

پیروں کو خشک رکھیں

اپنے پیروں کو بے چینی سے بچانے کا ایک گھریلو طریقہ یہ بھی ہے کہ آپ اپنے پیروں کو خشک رکھیں ایسے موزے پہنیں جن میں سے ہوا کا گزر ہو سکے۔اس کے لئے کاٹن کے موزے بہترین ہیں ۔پیروں پر بہت ذیادہ پسینہ نہ آنے دیں ۔اگر آپ کے پیروں پر بہت ذیادہ پسینہ آتا ہے تو تھوڑی دیر کے لئے جوتے اتار کر پیروں کو سکھا لیں ۔

ورزش

اس تکلیف کے باعث بعض اوقات چلنا پھرنا بھی مشکل ہو جاتا ہے ،باقاعدہ ورزش کرنا بھی پیروں کی جلن دور کرنے کے لئے بہترین ہے۔ورزش کرنے سے دوران خون صحیح ہوتا ہے،اور جب خون صحیح طرح گردش کرتے ہوئے پیروں میں پہنچتا ہے تو پیروں کی گر می دور کرنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔

پیروں کو پانی میں بھگوئیں

پیروں کوٹھنڈے پانی میں بھگوئیں تاکہ خون کا دوران پیروں کی طرف ہو ۔پیروں کو اس وقت تک پانی میں بھگوئیں جب تک جلن ختم نہ ہوجائے پیروں پر خالی برف نہ لگائیں بلکہ ٹھنڈے پانی میں پیروں کو ڈال کر بیٹھیں۔

مساج کریں

اپنے پیروں پر مالش کریں یا کسی اور سے کروائیں۔اس سے بھی پیروں کی طرف دوران خون بڑھے گا،اور پیروں کی جلن کم ہو جائے گی۔پیروں کی جلن سے بچنے کا سب سے بہترین طریقہ یہی ہے کہ پیروں میں خون کا دوران تیز تر ہو۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں