152

چین اپنا سورج لے آیا ۔۔ مصنوعی سورج کا تجربہ کامیاب، کس لیے استعمال کیا جائے گا؟

چین کی جانب سے ایک ایسا مصنوعی سورج تیار کیا گیا ہے جو کہ قدرتی سورج کی طرح روشنی دے گا۔ چین میں یہ تجربہ اپنی نوعیت کا الگ ہی ہے کیونکہ ایسا تجربہ آج تک کہیں دیکھنے کو نہیں ملا یے۔

چین کے اس مصنوعی سورج کو نیوکلیر فیوژن ری ایکٹر بھی کہا جاتا ہے، جو کہ سورج کے مقابلے میں سات گناہ زیادہ چلنے کے بعد بلند درجہ حرارت کا ریکارڈ اپنے نام کر چکا ہے۔

اس سورض کی انوکھی بات یہ بھی ہے کہ تجربے کے دوران درجہ حرارت سات کروڑ ڈگری سیلسیس تک پہنچ گیا تھا۔

ایڈوانسڈ سپر کنڈکٹنگ ٹوکاماک (ای اے ایس ٹی) نامی اس ادارے نے جس نے یہ سورج بنایا ہے، کہتی ہے کہ اس سورج نما مشین کے بنانے کا مقصد ستاروں کے اندر ہونے والی قدرتی ردعمل کی نقل کر کے تقریبا لامحدود توانائی فراہم کرنا ہے۔

چین کے اس پراجیکٹ پر اب تک 700 ارب یورو کی لاگت آ چکی ہے، جبکہ مزید یہ تجربہ جون تک جاری رہے گا۔

اس ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ لوگ اس مصنوعی سورج کے طلوع ہوتے ہی ویڈیو بنا رہے ہیں اور خوشی کا اظہار کر رہے ہیں۔ چین کے اس تجربے کو دنیا بھر میں توجہ حاصل ہو رہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں