بکری سے متعلق حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا دلچسپ معجزہ ضرور پڑھیں

خواتین اپنے حسن کے لیے کیا کیا جتن کرتی ہیں ‘ لیکن انہیںیہ خبر نہیں کہ ان کے ہاتھ میں موجود موبائل فون ان کی خوبصورتی کا دشمن ہے۔ ریسرچ رپورٹ کے مطابق شاید خواتین موبائل فون حد سے زیادہ استعمال سے نجات دلا سکے۔ خواتین مختلف کریموں اور لوشن سے اپنے چہرے کو شاداب رکھنے کی بھرپوراور کامیابی کوشش کرتی ہی رہتی ہیں لیکن جب چہرے پر جھریاں نمایاں ہو جاتی ہیں‘ ان کو چھپانے کے لیے نہ جانے کیا کوششیں کرنی پڑتی ہیں۔ پہلے جھریاں
چھپاؤ پھر میک اپ کرو۔ ایسی مواقع پر خواتین نانی‘دادی

کے ٹوٹکوں اور طرز زندگی کو یاد کرتی ہیں جو میک اپ سے دور رہنے کی وجہ سے بڑھاپے میں بھی حسین نظر آیا کرتی تھیں۔ خالص غذا اور قدرتی اشیاء کے استعمال کی بدولت ان کی جلد تروتازہ نظر آتی تھی۔ جدید تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ چہرے کی جھریاں کی وجہ عمر میں اضافہ یا میک اپ پرڈاکٹس کے حد سے زیادہ استعمال کے علاوہ بھی کچھ اور ہو سکتی ہیں۔ برطانوی ماہرین صحت نے بتایا کہ جدید موبائل فون خواتین کے چہرے پر جھریوں کا باعث بن رہے ہیں۔ 18مہینے کی تحقیق کے بعد ثابت ہوا ہے کہ خواتین کے حسن کا سب سے بڑا دشمن اسمارٹ فون کو قرار دیا جارہا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ چھوتی اسکرین پر دیر تک دیکھے سے ٹینشن کی کفیت پیدا ہوتی ہے۔چہرے کی جلد میں تبدیلی آتی ہے۔ خاس طور پر بھوں کے سکڑنے کا عمل شدید حد تک واقع ہوتا ہے۔ جو پورے چہرے کی جلد کو متاثر کرتا ہے۔ لندن اور جنوب مشرقی برطانیہ میں لڑکیوں کی بڑی تعداد کو اسمارٹ موبائل کے لیے اسمارٹ موبائل کے استعمال کے وجہ سے چہرے پر جھریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ لند کی بیوتی تھراپسٹ نکولا جوز بتاتی ہے کہ گزشتہ ڈیڑھ سال کے دوران ان کے پاس ایسی درجنوں لڑکیاں آچکی ہیں جو کم عمری میں ہی جھریوں کا شکار ہو گئی ہیں۔ جوزے ان لڑکیوں سے ان کی مصروفیات اور عادات کی تفصیل اکٹھی کی اور اس نتیجے پر پہنچتی کہ یہ آئی فون کا رد عمل ہے اس حوالہ سے انہوں نے ٹیکنالوجی اور صحت کے ماہرین سے بھی مناسب مشاورت کی جس کے بعد اس بات کی تصدیق ہو گئی کہ چھوتی اسکرین پر دیکھنے میں زیادہ وقت صرف کرنے سے یہ رد عمل ضرور ہوتا ہے۔کسی بھی چیز کو حاصل کرنے کے لئے آپ کو سب سے پہلے چند غلط عادات سے پرہیز اور احتیاط کرنی ہوتی ہے، جیسے کہ سورج کی تپتی دھوپ میں زیادہ باہر نہ نکلنا، اگر نکلیں تو سب بلاک کا استعمال کرنا، ایسے کپڑوں کا استعمال کرنے جو آپ کو سورج کی سختی سے بچائے، سگریٹ نوشی سے گریز اور موسچرائزر کا باقاعدہ استعمال، یاد رکھیں کہ اسکن موسچرائزر چہرے اور ہاتھ پاؤں پر صرف سردیوں میں ہی نہیں بلکہ ہر موسم میں استعمال کرنا بہت ضروری ہے۔ اُلٹا سیدھا سونے سے گریز کریں اور کوشش کریں کہ صرف کمر کے بل سویا کریں، اب آپ سوچ رہیں ہوں گے کہ آخر کمر کے بل سونے سے چہرے اور ہاتھ پاؤں کی جھائیوں کا کیا تعلق ہے؟ دراصل جب آپ کروٹ بدل کر سوتے ہیں تو آپ کا چہرہ تکیے سے مستقل دب جاتا ہے اور کبھی اُلٹی کروٹ اور سیدھی کروٹ کی وجہ سے چہرے کے دونوں جانب گالوں اور آنکھوں کے پاس جھائیاں جلد آنے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں اس لئے سیدھا سوئیں۔ اگر آپ جلد کو ترو تازہ اور جوان رکھنے کے خواہش مند ہیں تو ایسی غذاؤں کا استعمال کریں جن میں فیٹی ایسڈ موجود ہو کیونکہ ماہرین کا ماننا ہے کہ فیٹی ایسڈ ہماری جِلد کو جوان رکھنے میں مدد دیتے ہیں اس کے لئے مچھلی اور دیگر آبی حیات جو حلال ہوں ان کو اپنی غذا کا حصہ بنا لیں کیونکہ ان میں پروٹین، فیٹی ایسڈ اور اومیگا تھری کی وافر مقدار موجود ہوتی ہے جو جلد کے لئے اور بالوں کے لئے بے حد مفید ہے۔ کچھ لوگ ایسا محسوس کرتے ہیں کہ ان کا چہرے گندا ہو رہا ہے اور صحیح نہیں لگ رہا یا پھر وہ اپنی آئلی اسکن سے پریشان ہوتے ہیں اور ایسے میں اپنا چہرہ بار بار دھوتے ہیں، ایسا کرنے سے ان کی جلد میں موجود قدرتی آئل دور ہو جاتا ہے اور چہرے پر بار بار کیمکل لگنے کی وجہ سے سائیڈ ایفیکٹ ہو جاتا ہے پھر دانے دھبے جھائیاں اور کئی مشکلات جھیلنی پڑ سکتی ہیں۔ کچھ تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ جلد پر وٹامن سی والی کریمز کے استعمال سے جلد میں بہتری آتی ہے جلد نکھرتی ہے اور بڑھتی عمر کے اثرات گھٹنے لگتے ہیں اس لئے نائٹ کریم ہو یا ڈے ایسی کریم کا استعمال کریں جس میں وٹامن سی کی ایک حد تک مقدار موجود ہو۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں