وزیراعلیٰ پنجاب کے احکامات پر ڈپٹی کمشنر لاہور نے مالی امداد کے ساتھ صائمہ سروس کو سول ڈیفینس میں نوکری کا لیٹر بھی جاری کیا لیکن شاید انہوں نے جوائننگ نہیں دی۔ وزیراعلیٰ پنجاب کے فوکل پرسن اظہر مشوانی کا ٹویٹ

صائمہ کے دوبارہ جوکر بن کر کھلونے بیچنے پر پنجاب حکومت کا ردِعمل آ گیا۔تفصیلات کے مطابق جوکر کے روپ میں کھلونے بیچ کر بیمار ماں کا علاج کرانے والی باہمت لڑکی صائمہ حکومتی امداد کا انتظار کرنے کے بعد تھک کر حکومت پر برس پڑی تھی۔ نجی ٹی وی چینل سے بات کرتے ہوئے صائمہ نے کہا کہ میری مشکلات آسان کرنے کا وعدہ کرنے والوں نے میری مشکلات میں مزید اضافہ کر دیا ہے۔
میری مالک مکان کہتی ہیں کہ برائے مہربانی اپنے گھر کا کچھ کر لو، تم نے ساری دنیا کو میرا گھر دکھا دیا ہے کوئی قبضہ ہی نہ کر لے۔ کیونکہ وہ بھی بیوہ ہے اور ڈرتی ہیں۔ مجھے جو پچاس ہزار دیا گیا کاش حکومتی نمائندے مجھے یہ بھی بتا دیتے کہ میں اُس کی کتنی فوٹو کاپیز کرواؤں ۔

میں کہتی ہوں کہ چاہے کچھ نہ دیں لیکن جھوٹے وعدے کر کے ، جھوٹی آس اُمیدیں دلوا کر کسی کا دل نہ دُکھائیں۔

خاتون کے دعوے کے بعد وزیراعلیٰ پنجاب کے فوکل پرسن اظہر مشوانی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب کے احکامات پر ڈپٹی کمشنر لاہور نے مالی امداد کے ساتھ صائمہ سروس کو سول ڈیفینس میں نوکری کا لیٹر بھی جاری کیا لیکن شاید انہوں نے جوائننگ نہیں دی۔اظہر مشوانی نے کہا کہ اس کے ساتھ ان کی والدہ کے سرکاری خرچے پر علاج کے لیے میڈیکل بورڈ کی تشکیل بھی کی گئی۔
اس موقع پر اظہر مشوانی ایک اپوائٹمنٹ لیٹر بھی شئیر کیا جس کے مطابق صائمہ کو سول ڈیفینس میں ڈیلی ویجز پر نوکری دی گئی۔

دوسری جانب صائمہ کا کہنا ہے کہ اسے قطرے پلانے والی نوکری دی گئی ہے اس لیے اس نے جوائن نہیں کیا۔یاد رہے کہ مجبوری میں میڈیکل کی تعلیم چھوڑنے والی لاہور کی صائمہ سرور سے حکومت نے امداد کا وعدہ کیا تھا ۔ وزیراعلیٰ پنجاب نے نوٹس لے کر مجبوری میں میڈیکل کی تعلیم چھوڑنے والی صائمہ سرور کی والدہ کے علاج معالجے اور مالی امداد کے لیے متعلقہ حکام کو ہدایات جاری کر دی تھیں۔ اردو پوائنٹ کی جانب سے حال ہی میں صائمہ سرور کی دکھ بھری کہانی سامنے لائی گئی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں