راشد لطیف نے چیئرمین پی سی بی سے کم عہدہ قبول کرنے سے انکار کردیا

شعیب اختر کے بعد راشد لطیف نے بھی چیئرمین پی سی بی سے کم عہدہ قبول کرنے سے انکار کردیا ۔ 53 سالہ سابق کپتان سے پوچھا گیا کہ آپ پی سی بی میں کوئی ذمہ داری کیوں نہیں سنبھالتے تو ان کا جواب تھا کہ اب میں میڈیا سے وابستہ ہوچکا ہوں، اس لیے بورڈ میں ملازمت کا سوچا بھی نہیں ہے ، سابق کپتان نے کہا کہ شعیب اختر کہتے ہیں کہ جب آیا تو بطور چیئرمین ہی آؤں گا ، اسی طرح میں بھی کہتا ہوں کہ کرکٹ بورڈ کا سربراہ بن کر ہی آؤں گا، ورنہ کوئی ذمہ داری نہیں لوں گا، میں کام کرنا چاہتا ہوں لیکن اس سسٹم میں ایسا ہونا مشکل ہے۔

راشد لطیف نے کہا کہ مصباح الحق سے پہلے مجھے پیشکش کی گئی تھی، وہ ہیڈ کوچ، بیٹنگ کوچ، چیف سلیکٹر اور اسلام آباد یونائیٹڈ کے ہیڈ کوچ بنے، ان کے پاس 4 عہدے تھے لیکن اب وہ کہیں نہیں ہیں ، یہی ہمارے نظام کی خرابی ہے ، آج مجھے لیں گے تواستعمال کرنے کے بعد میرا حال بھی مصباح کی طرح ہوگا، ماضی میں 1994ء ،1996ء اور 2003ء میں بھی مجھے استعمال کیا گیا، اس کے بعد فیصلہ کیا کہ اب ایسا نہیں ہونے دوں گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں