وزیر اعظم جونیجو نے امریکی صدر کا دھمکی آمیز خط پڑھایا تو آگے سے ڈاکٹر عبدالقدیر نے کیا کہا؟ ایسا واقعہ کہ آپ بھی انہیں سلیوٹ کریں گے

سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان کے سابق چیئرمین ظفر حجازی نے ڈاکٹر عبدالقدیر خان کا دلچسپ قصہ سنا دیا ۔ تفصیلات کے مطابق سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ظفر حجازی نے لکھا ہے کہ ’’ڈاکٹر قدیر صاحب نے

ایک بار بتایا کہ انہیں مرحوم جونیجو نے بلایا اور ایک دھمکی آمیز خط پڑھایا جو امریکی صدر کی طرف سے تھا جب ملاقات کے بعد ڈاکٹر صاحب اٹھ کر جانے لگے تو جونیجو مرحوم نے دھیرے سے کہا کہ ڈاکٹر صاحب اگر ملک پہ کوئی افتاد پڑ جاے تو کتنے وقت میں ہم تجربہ کر سکتے ہیں۔ظفرحجازی کا کہنا تھا کہ ڈاکٹر قدیر خان صاحب نے جواب دیا وزیرآعظم صاحب آپ حکم کیجیے،

ہم آپ کو حکم واپس لینے کا وقت بھی نہیں دیں گے، اور جونیجو مرحوم کا چہرہ خوشی سے تمتما اٹھا۔ کہاں سے ڈھونڈھ کے لاؤ گے ایسے لوگ۔انکا کہنا تھا کہ ڈاکٹر قدیر کے پاے کا محب وطن کون ہو گا؟؟ انہیں کہا گیا کہ اگر ایک ملک کو ایٹمی ٹیکنالوجی ٹرانسفر کرنے کا الزام اپنے سر لے لیں تو ہاکستان بہت بڑی مصیبت سے بچ سکتا ہے۔محسن پاکستان نے الزام اپنے سر لے لیا

۔ کہاں سے لاؤ گے اتنے عظیم لوگ!!!۔ ڈاکٹر ظفر کا ڈاکٹر قدیر خان کو الوداعی پیغام میں کہنا تھا کہ ’آسمان آج پھر اسی طرح رویا اور بجلیاں بھی اسی طرح کڑکیں جیسے سلطان ٹیپو کی شہادت پہ کڑکی تھیں

۔شدیدبارش میں بھیگتے ہزاروں نوجوانوں اور بزرگوں کے ساتھ اشکبار آنکھوں سے محسن پاکستان کو رخصت کرکے ابھی گھر پلٹا ہوں۔ الوداع محسن پاکستان۔ آسمان تیری لحد پہ شبنم افشانی کرے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں