24 ہزار سال بعد خوردبینی جاندار زندہ دریافت

سائبیریا کے برفانی ماحول میں خوردبینی جاندار 24 ہزار سال بعد بھی زندہ دریافت ہوا ہے۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق روسی ماہرین کا کہنا ہے کہ ڈیلائیڈ نامی یہ جاندار پانی میں زندہ رہتا ہے اور سائبیریا میں ہزاروں سال سے جمی برف کے

نمونوں میں ڈیلائیڈ کے موجودگی پائی گئی ہے۔اس سے قبل اندازہ لگایا گیا تھا کہ یہ جاندار برف میں ایک ہزار سال تک زندہ رہ سکتا ہے۔خیال رہے کہ چند روز قبل آسٹریلیا میں دنیا کے سب سے بڑے ڈائنوسار کی باقیات دریافت کی گئیں تھیں۔آسٹریلیا کے جنوب مغربی کوئنز لینڈ میں سبزی خور ڈائنو سار کو دریافت کیا گیا جو ممکنہ طور پر 9 کروڑ 20 لاکھ سے 9 کروڑ 60 لاکھ سال پہلے یہاں رہتا تھا۔ڈائنو سار کی لمبائی 25 سے 30 میٹر، وزن 67 ٹن جبکہ زمین سے دم تک کا فاصلہ 5 سے ساڑھے 6 میٹر کا ہے۔ماہرین کے مطابق ٹائٹنوسار کے خاندان کی یہ نئی قسم ہے جسے کوپر کا نام دیا گیا ہے۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں