38 مسافروں کے پاس کورونا ٹیسٹ رپورٹ ہونے کے باوجود انہیں بورڈنگ پاس جاری نہیں کیا گیا،مسافروں کا مدینہ ائیرپورٹ پر احتجاج

پی آئی اے کی پرواز مسافروں کو سعودی عرب میں چھوڑ کر پاکستان کیلئے روانہ ..

پی آئی اے کی پرواز مسافروں کو سعودی عرب میں چھوڑ کر پاکستان کیلئے روانہ ہو گئی۔مدینہ سے اسلام آباد آنے والی پی آئی اے کی پرواز 38 مسافروں کو سعودیہ میں چھوڑ کر پاکستان کے لیے روانہ ہوگئی۔تفصیلات کے مطابق مدینہ سے اسلام آباد آنے والی پی آئی اے کی پرواز 38 مسافروں کو سعودیہ میں چھوڑ کر پاکستان کے لیے روانہ ہوگئی۔

پی کے 948 کے مسافروں کی جانب سے مدینہ ایئرپورٹ پر احتجاج بھی کیا گیا۔38 مسافروں کے پاس کورونا ٹیسٹ رپورٹ ہونے کے باوجود انہیں بورڈنگ پاس جاری نہیں کیا گیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق کیوآرکوڈ کے باوجود مسافروں کو سفر کی اجازت نہیں دی گئی، مسافروں کا کہنا ہے کہ ہم نے گاگا کی ہدایت کے مطابق کورونا ٹیسٹ کرائے جو پی آئی اے نے قبول نہیں کیے۔

عید کے موقع پر ہم گھر جانا چاہ رہے تھے لیکن ہمیں سوار نہیں ہونے دیا گیا۔مسافروں نے پی آئی اے انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ ہمیں وطن بھجوانے کے لیے فوری اقدامات کیے جائیں۔دوسری جانب : سعودی عرب کی ویکسین سے متعلق شرط نے پاکستانی مسافروں کو مشکل میں ڈال دیا ہے۔ سعودی حکومت کی تجویز کردہ ویکسین میں چین کی تیار کردہ ویکسین شامل ہی نہیں ہے۔

سعودی عرب کی جانب سے فائزر ، آکسفورڈ، موڈرنا اور جانسن اینڈ جانسن کی کورونا ویکسین تجویز کی گئیں۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق سعودی عرب کی جانب سے تجویز کردہ ویکسین نہ لگوانے والے مسافروں کے لیے قرنطینہ لازمی ہوگا جس کے اخراجات مسافر کو خود ادا کرنا ہوں گے اور تجویز کردہ شرائط پر عمل درآمد رواں ماہ 20 مئی سے ہو گا۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ اکستان میں زیادہ تر افراد کو چین کی تیار کردہ کورونا ویکسین لگائی جا رہی ہے جس کے باعث پاکستانیوں کو سعودی عرب جانے میں بڑی مشکلات کا سامنا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں